قومی خبریں

کراچی کے بدامنی پھیلانے میں رینجرز اور ایجنسیاں ملوث ہیں: شفیع برفت

کراچی کا امن امان خراب کرنے، ٹارگٹ کلنگ، کراچی کو خون میں ڈبونے اور بدامنی پھیلانے میں ٩٠% فیصد رینجرز اور ایجنسیاں ملوث ہیں. اسے خیالوں کا اظہار جسمم چیئرمیں نے ایک بیاں میں کیا۔

شفیع برفت نے مزید کہا بدامنی پہلانے کا  مقصد رینجرز کو کراچی میں رکھنے کا جواز پیدا کرنا تھا. یہ سارا ڈرامہ اور عوام دشمنی خود رینجرز اور ایجنسیوں کی پیدا کی ہوئی تھی تاکہ ایک طرف رینجرز کو کراچی میں رکها جائے، جس کہ سارے اخراجات سندھ سے ہی وصول ہوں اور دوسری طرف کراچی کی سیاسی قوت (جو سندھ کی شهری سیاسی قوت ہے) ایم کیو ایم اس کے خلاف وقت آنے پر آپریشن کیا جائے۔

جسمم چیئرمیں کا مزید کہا تھا  یہ ساری سازش رینجرز اور ایجنسیوں کی پیدا کی ہوئی ھے، سب اس بات کو جانتے ہیں، مگر کوئی بھی کھل کر یہ بات  نہیں کہتا، کیوں کہ  کل کو رینجرز والے اُس کو ٹارگٹ کلر کہہ کر قتل نہ کردیں، یہ سندھ کے خلاف پنجاب کی ایک بہت بڑی سازش ہے، کہ کراچی کے اختیارات اور سیاست میں پنجاب کی اجارہ داری قائم کی جائے.

جسمم چیئرمیں کا مزید کہا تھا ریاست کی یہ بھی سازش تھی کہ کراچی والوں کو راء کا ایجنٹ کہہ کر  اتنا بدنام کرو کہ کل جب ان کا قتل عام  کیا جائے جو ہو رہا ھے تو باقی سندھ خاموش رہے، جس کے بعد اگر باقی ساری سندھ میں اگر ریاست قتل عام شروع  کرے تب اس وقت کراچی والے بھی خاموش تماشائی بنے رہیں،

جسمم چیئرمیں نے کہا کے اس طرح پنجاب سندھ کو سیاسی حوالے سے تقسیم کرکے سندھ میں اپنی لوٹ مار، اجارہ داری اور قبضہ برقرار رکھنا چاھتا ہے، سندھ کو اپنی کالونی بنا کر ھمیشہ غلام کرنا چاھتا ہے، اس لئے اب جو کچھ الطاف حُسین اور ایم کیو ایم کے خلاف ریاست سازش کر رهی ہے وہ دراصل  سندھ  کو کمزور کرنے اور سیاسی نفسیاتی حوالے سے سندھ کو تقسیم کرنے کی سازش ہے.