قومی خبریں

تربت میں سندھی مزدوروں کا قتل، پالیسی ہے یا غلطی: شفیع برفت کا ٹوئیٹر پر اللہ نظر سے سوال

جسمم چیئرمیں کے ٹوئیٹر پر تازہ ٹوئیٹ
جسمم چیئرمیں کے ٹوئیٹر پر تازہ ٹوئیٹ

گذرشتہ روز تربت میں قتل کیئے جانے والے سندھی مزدوروں کے متعلق اپنے تازہ ٹویٹر پیغام میں جسمم کے چیئرمیں شفیع برفت نے کہا ہے کہ: بلوچ اور سندھی برادر قومیں ہیں اور ان کا تعلق فطری ہے۔

جسمم چیئرمیں جوکہ سندھ اندر بلوچ قومی تحریک کے بڑے حمایتی مانے جاتے ہیں انھوں تربت واقع کے متعلق ڈاکٹر اللہ نظر اور ان کے تنظیم سے سوال کیا ہے کے کیا سندھیوں کا قتل تنظیم کی پالیسی تھی یا اتفاقی واقع؟ اس پر بی ایل ایف اپنا موقف جاری کرے اور بھائیچارہ قائم رکھنے کے لیئے وہ سندھی قوم سے معذرت کریں۔

جسمم چیئرمیں نے کہا کے تازہ کاروائی کے نتیجے سندھ اندر ڈاکٹر اللہ نظر کی مقبولیت متاثر ہوئی ہے۔ اپنے ایک ٹوئیٹ میں انھونے کہا کہ بلوچ نوجوانوں کو نواب خیر بخش خاں مری اور نواب اکبر خان بگٹی کی تعلیمات کی بنا پر اپنے سندھی بھائیوں کے ساتھ تعلق روا رکھنا چاہیئے۔

بلوچ قیادت نواب برھمداغ بگٹی، نواب مہراں مری، حیربیار مری اور ڈاکٹر اللہ نظر ہمارے بھائی ہیں اور رہیں گے۔ ہمارا مقصد ایک اور دشمن بھی ایک ہے