انسانی حقوق

سندھی قوم پرست کارکناں کے گھروں پر رینجرس اور خفیا اداروں کے چھاپے

Sajjad-Shar-Raja-Dahar-JSMM

سندھ کے تاریخداں، ادیب، دانشور عطامحمد بھنبھرو کے بیٹے اور جسمم کے مرکزی رہنما راجا کو داہر گذرشتہ رات رینجرس اور سادہ کپڑوں میں ملبوس اہلکاروں نے گرفتاری کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کیا گیا ہے۔  دوسری جانب آج جسمم کے جنرل سیکریٹری سجاد شر، جسمم سوبھو دیرو کے رہنما فیاض ڈاہری اور دیگر کارکنن کے گہروں پر رینجرس نے چھاپے مارے اور عورتوں اور بزرگوں پر تشدد کیا۔ جسمم جنرل سیکریٹری سجاد شر کے دو عزیزوں کو گرفتار بھی کیا گیا ان کی گرفتاری بھی ابھی تک ظاہر نہیں کی گئی۔

جسمم کے چیئرمیں شفیع محمد برفت نے کارکناں کے گھروں پر بلاجواز کاروائیوں کی مذمت کی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ راجا داہر کو رینجرس نے ریاستی ایجنسیوں کے حوالے کردیا ہے اور خدشہ ہے کہ داہر کو تشدد کے بعد شہید کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ رینجرس نے جسمم کے رہنما سجاد شر کے گھر پر چھاپا مارا اور ان کے دو عزیزوں کو اغوا کرکے لیے گئے۔

جسمم چیئرمیں کا کہنا تھا کہ گذرشتہ روز سے 20 سے زیادہ کارکناں گرفتار کیئے گئے ہیں لیکں ان کی گرفتاری ابھی تک ظاہر نہیں کی گئی اور خدشا ہے کہ تمام گرفتار کارکنان ریاستی ایجنسیوں کی تحویل میں ہیں اور انہیں تشدد کے بعد شہید کیا جائے گا۔

جسمم چیئرمیں نے پ پ پ کو آڑے ہاتھ لیتے ہوئے کہا کہ موجودہ وڈیروں کی حکومت میں قومی کارکناں کے خلاف آپریشں تیز کیا گیا ہے اور ہم ریاستی اداروں سمیت پ پ پ کے وڈیروں کو بھی ایسی کاروائیوں میں برابر کا حصیدار مانتے ہیں۔

جسمم چیئرمیں نے تمام کارکناں کو پابند کیا ہے کہ وہ آج ریاستی بربریت اور کارکنوں کی بلاجواز گمشدگیوں کے خلاف احتجاج کریں۔